30

نیوزی لینڈ کو شکست ، آسٹریلیا ٹی ٹوئنٹی کرکٹ کا چیمپئن بن گیا

دبئی : آئی سی سی ٹی ٹوئنٹی کرکٹ ورلڈ کپ کے فائنل میں آسٹریلیا نے نیوزی بآسانی 8 وکٹوں سے شکست دے دی ہے۔ نیوزی لینڈ کی طرف سے دیا گیا 173 رنز کا ہدف انیسویں اوور میں ہی پورا کرلیا۔

پنجاب ٹائمز نیوز کے مطابق آسٹریلیا نے ہدف کا تعاقب شروع کیا تو اوپنرز نے اسکور کو 15 تک پہنچایا ہی تھا کہ تیسرے اوور میں کپتان ایرون فنچ صرف پانچ رنز بنانے کے بعد ٹرینٹ بولٹ کی وکٹ بن گئے۔

پہلی وکٹ گرنے کے بعد ڈیوڈ وارنر کا ساتھ دینے مچل مارش آئے اور دونوں عمدہ بیٹنگ کرتے ہوئے 92رنز سے زائد کی شراکت قائم کر چکے ہیں۔

مسلم لیگ ق کے فیصلے پر پریشان وزیراعظم نے پارٹی رہنماؤں کا اجلاس کل طلب کر لیا
ڈیوڈ وارنر نے عمدہ فارم کا سلسلہ جاری رکھتے ہوئے نصف سنچری مکمل کی اور 38 گیندوں پر 53 رنزکی اننگز کھیلی لیکن اس مرحلے پر ٹرینٹ بولٹ نے انہیں اپنا شکار کر لیا۔

دبئی میں کھیلے جا رہے میچ میں آسٹریلیا نے ٹاس جیت کر نیوزی لینڈ کو بیٹنگ کی دعوت دی تھی۔ نیوزی لینڈ کے اوپنرز مارٹن گپٹل اور ڈیرل مچل نے مثبت انداز میں اننگز کا آغاز کیا اور ابتدائی اوورز میں کوئی وکٹ نہ گرنے دی۔

دونوں نے ٹیم کو 28 رنز کا آغاز فراہم کیا لیکن ہیزل وُڈ نے اپنی ٹیم کو پہلی کامیابی دلاتے ہوئے سیمی فائنل کے ہیرو مچل کی اہم وکٹ حاصل کر لی۔ نیوزی لینڈ کو پہلی وکٹ گرنے کے بعد آسٹریلین باؤلرز کی نپی تلی باؤلنگ کے سبب رنز بنانے میں مشکلات کا سامنا ہے۔

معمر قذافی کے بیٹے کا صدارتی الیکشن لڑنے کا اعلان
کین ولیمسن کو 21 کے مجموعی اسکور پر ایک موقع ملا جب باؤنڈری پر موجود جوز ہیزل وُڈ ان کا کیچ نہ لے سکے اور گیند باؤنڈری کے پار چلی گئی۔

ولیمسن نے اس موقع کا فائدہ اٹھایا اور مچل اسٹارک کے اوور میں 19 رنز بنائے اور پھر انہی کی جانب سے کرائے گئے 16ویں اوور میں 22 رنز بنائے۔

مارٹن گپٹل اور ولیمسن کے درمیان 48 رنز کی شراکت قائم ہوئی لیکن زامپا کو چھکا مارنے کی کوشش میں گپٹل مڈ وکٹ باؤنڈری پر کیچ دے بیٹھے۔

تاہم پورے ٹورنامنٹ میں آؤٹ آف فارم رہنے والے ولیمسن نے فائنل میں بہترین کھیل پیش کرتے ہوئے نصف سنچری مکمل کی۔

اب تحریک انصاف کے ساتھ چلنا مشکل ہوگیا: ق لیگ کی پارلیمانی پارٹی کا فیصلہ
ولیمسن نے نئے بلے باز گلین فلپس کے ساتھ تیسری وکٹ کے لیے 68رنز کی شراکت قائم کی جس میں فلپس کا حصہ صرف 18رنز کا رہا۔فلپس 18رنز بنانے کے بعد ہیزل وُڈ کی دوسری وکٹ بن گئے جبکہ دو گیند بعد ولیمسن بھی چلتے بنے۔

ولیمسن نے 48 گیندوں پر 10 چوکوں اور 3 چھکوں کی مدد سے 85 رنز کی اننگز کھیلی جو ٹی20 ورلڈ کپ فائنل میں اب تک کسی بھی ٹیم کے کپتان کی جانب سے کھیلی گئی سب سے بڑی اننگز ہے۔

ٹی20 ورلڈ کپ فائنل میں بحیثیت کپتان سب سے بڑی اننگز کھیلنے کا اعزاز کمار سنگاکار کے پاس تھا جنہوں نے 2009 کے فائنل میں پاکستان کے خلاف 64 رنز کی اننگز کھیلی تھی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں