4

سکول میں آتشزدگی ، 30 بچے ہلاک متعدد جھلس گئے

نائیجر : بھوسے سے بنے سکول میں آگ لگنے سے 30 بچے جاں بحق ہوگئے ۔ مرنے والوں میں زیادہ تر کی عمریں پانچ سے چھ سال کے درمیان ہیں ۔

تفصیلات کے مطابق جنوبی نائجر کے علاقے میں پرائمری سکول میں اچانک آگ لگنے سے 30 بچے ہلاک ہوگئے جبکہ متعدد جھلس گئے ۔ آگ لگنے کے باعث پانچ بچوں کی حالت تشویشناک بتائی گئی ہے ۔

ہسپتال ذرائع کے مطابق بچوں کی ہلاکت آگ کے باعث جھلسنے اور دم گھٹنے سے ہوئی ہے ۔ آگ سے جھلسے بچوں کو ہسپتال میں پہنچادیا گیا تاہم کئی بچے ہسپتال پہنچنے سے پہلے ہی دم توڑ گئے ۔

ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ، انگلینڈ اور نیوزی لینڈ کے درمیان پہلا سیمی فائنل آج کھیلا جائے گا
ڈاکٹروں کے مطابق پانچ سے آٹھ بچوں کی حالت نازک ہے ان کو طبی امداد فراہم کی جارہی ہے لیکن وہ آگ سے بہت زیادہ متاثر ہوچکے ہیں ۔

حکام کا کہنا ہے کہ ابھی یہ واضح نہیں ہورہا کہ آگ کیسے لگی تاہم سکول ٹیچرز سے تحقیقات کی جارہی ہیں کہ کہیں کسی ٹیچر نے سلگتا سگریٹ تو نہیں پھینک دیا جس کی وجہ سے آگ لگی ۔

مقامی گورنر نے واقعہ کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ جنوبی نائجر میں بھوسے کی چھت سے بنے سکول میں آتشزدگی کی وجہ سے تیس بچے ہلاک ہوئے ہیں ۔ ان کا کہنا تھا کہ ملک میں کئی سکول ایسے ہیں جن کی چھتیں اوردیواریں لکڑی اور بھوسے کی مدد سے بنائی گئی ہیں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں