19

عامر لیاقت پولیس آفیسر سے الجھ پڑے، رکن اسمبلی کیخلاف مقدمے کی درخواست

کراچی: رکن قومی اسمبلی عامر لیاقت شارع فیصل پر پولیس آفیسر سے الجھ پڑے اور پولیس پر الزام لگا دیا۔

تحریک انصاف کے رکن قومی اسمبلی عامر لیاقت شارع فیصل پر کورونا ویکسین سر ٹیفیکیٹ چیک کرنے کے معاملے پر شارع فیصل پر پولیس آفیسر سے الجھ پڑے۔ اس موقع پر انہوں نے الزام لگایا کہ پولیس والے کورونا ویکسین سر ٹیفیکیٹ چیک کرنے کی آڑ میں پیسے بٹورے جا رہے ہیں تاہم

ویڈیو میں نظر آنے والے ٹریفک پولیس آفیسر کا الزام سے انکار کر دیا۔ پولیس کی جانب سے تھانہ فیروز آباد میں عامرلیاقت کے خلاف درخواست جمع کرادی گئی ہے تاہم مقدمہ درج نہیں کیا گیا۔

دوسری جانب عامر لیاقت نے وزیراعلی سندھ مراد علی شاہ کو پیغام میں کہا کہ مراد علی شاہ صاحب یا سندھ کے انیل کپور یا تامل ناڈو کے وزیراعلی، کون ہو آپ ، جو بھی ہو یہ کیا کر رہے ہیں آپ کراچی کے ساتھ، یہ کراچی کی سڑکوں پر ویکسین کارڈ چیک کرنے والے پولیس اہلکاروں کے پاس ویکسینیشن کارڈ ہیں۔

پاکستان اور ویسٹ انڈیز کے درمیان آخری ٹی ٹونٹی میچ آج کھیلا جائے گا
انہوں نے اپنے پیغام میں مزید کہا کہ انکی اپنی ویکسینیشن ہوئی ہہے جو لوگوں کے ویکسنیشن کارڈ چیک کرتے پھر رہے ہو ، تنگ کر رہے ہو پیسے مانگ رہے ہیں ، کیا دھندا بنایا ہوا ہے آپ نے یار، سدھر جائیں صیح ہو جائیں کراچی والوں کو کتنا تنگ کرینگے آپ ، کتنا پریشان کرینگے۔

سی پیک منصوبوں سے توانائی کے بحران پر قابو پانے میں مدد ملی،سرمایہ کاری بورڈ
عامر لیاقت نے وزیراعلیٰ سندھ کو مخاط کرتے ہوئے کہا کہ آپکے میرے اتنے اچھے تعلقات ہیں خراب ہو رہے ہیں بہت خراب، کیا آپ انیل کپور بنننا چاہتے ہو نہیں وہ ایک دن کا انیل کپور تھا آپ پانچ سال کے لئے آئے ہو، صیح ہو جاو یار ، صیح ہو جائیں یہ نہ کریں کراچی کے لوگ بھپر گئے تو بڑا مشکل ہو جائے گا

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں