18

بھارت: کمبھ میلہ میں شریک سینکڑوں افراد کو کورونا ہوگیا

بھارت کی ریاست اتراکھنڈ کے شہر ہریدوار میں جاری مذہبی تہوار کمبھ میلے میں شریک سینکڑوں افراد میں کورونا وائرس کے کیسز سامنے آئے ہیں۔

برطانوی نشریاتی ادارے بی بی سی کے مطابق ہندو مذہبی تہوار کمبھ میلہ میں تین دن کے دوران 30 لاکھ سے زائد ہندو عقیدت مند شریک ہوئے ہیں۔ سینکڑوں ہندو ایک ایسے وقت میں گنگا میں ڈبکی لگانے کے لیے جمع ہوئے ہیں جب انڈیا میں کووڈ 19 کی دوسری لہر جاری ہے۔

اتراکھنڈ کے صحت کے حکام کا کہنا ہے کہ منگل کے روز میلے میں شریک 20،000 سے زائد افراد کے نمونے لیے گئے تھے جن میں سے 300 سے زائد افراد کے مثبت نتائج موصول ہوئے ہیں۔

حکام کے مطابق کورونا مثبت نتائج آنے کے بعد انہیں الگ کرکے ہریدوار شہر کے اسپتالوں میں منتقل کردیا گیا ہے۔

رپورٹ کے مطابق مذہبی تہوار کمبھ میلے میں شریک لاکھوں کی تعداد میں ہندو عقیدت مند دریا گنگا میں نہا چکے تھے۔ ہندوؤں کے عقیدے کے مطابق گنگا ایک پاک ندی ہے اور اس میں نہانا ان کے گناہوں کو پاک کر دیتا ہے اور نجات کا ذریعہ بنتا ہے۔

مزید پڑھیں:

حکام کا کہنا ہے کہ بڑے ہجوم کے باعث وہ حفاظتی اقدامات پر عمل درآمد یقینی بنانے کی کوشش کر رہے ہیں۔

منگل کے روز ایک ہی دن بھارت میں 184،372 نئے کورونا کیس رپورٹ ہوئے ہیں۔ یہ اب تک کا سب سے زیادہ روزانہ اضافہ ہے۔ کمبھہ میلے شریک سینکڑوں افراد بشمول آٹھ مذہبی رہنماؤں کا کورونا ٹیسٹ مثبت آیا ہے۔

کورونا وبا کے دوران میلے کی اجازت دینے پر بہت سارے لوگوں نے حکومت کو تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔

بھارتی حکام کا کہنا ہے کہ بدھ کی سہ پہر تک قریباً 900،000 افراد نے مقدس ندی میں ڈوبکی لگائی ہے۔

ہندوؤں کے عقیدے کے مطابق گنگا ایک پاک ندی ہے اور اس میں نہانا ان کے گناہوں کو پاک کر دیتا ہے اور نجات کا ذریعہ بنتا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں