44

نیب عدالتوں میں کیمرے لگائے جائیں تاکہ عوام کو پتا چلے کیسز کیسے بنتے ہیں، خاقان عباسی

کراچی: مسلم لیگ (ن) کے رہنما شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ نیب عدالتوں میں کیمرے لگائے جائیں تاکہ پاکستان کے عوام دیکھ سکیں کہ کیسے کیسز بنائے جارہے ہیں۔

یہ بات انہوں نے احتساب عدالت میں پیشی کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہی۔ قبل ازیں احتساب عدالت میں پی ایس او میں غیر قانونی بھرتیوں سے متعلق ریفرنس کی سماعت ہوئی جو ملزمان کے خلاف گواہ کے بیان پر جرح مکمل ہونے پر 10 اپریل تک ملتوی ہوگئی۔

سماعت کے بعد میڈیا سے بات کرتے ہوئے سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ نیب عدالتوں میں کیمرے لگائے جائیں، پاکستان کے عوام دیکھ سکیں کہ کیسے کیسز بنائے جارہے ہیں جو حکومت سینیٹ الیکشن میں کیمرے لگاسکتی ہے وہ کچھ بھی کرسکتی ہے۔
رہنما ن لیگ نے کہا کہ نیب کی حقیقت نیب کی اس پٹیشن سے پتا چل گئی جو مریم نواز کی ضمانت منسوخی کے لیے لگائی گئی، کہا گیا کہ مریم قومی اداروں کے خلاف بیان دیتی ہیں، صرف ہراساں کرنے اور زباں بندی کے لیے ایسا کیا جارہا ہے، نیب کی حقیقت اور مقصد کو لوگ جانتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ حکومت کی بدنیتی عیاں ہوچکی ہے، پی ایم نے اسپیکر کو الیکشن ریفارمز کمیٹی کے لیے خط لکھا ہے جو حکومت ووٹ چوری کرتی ہو وہ کیا ریفارم کرے گی؟

شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ جو حکومت پریزائیڈنگ افسر اٹھا کر لے جاتی ہے وہ مشینیں بھی اٹھا سکتی ہے، حکومت کو پارلیمان کے اصولوں تک کا معلوم نہیں، الیکٹرونک ووٹنگ مشین کیا ہے پہلے تو چوہدری صاحب یہ بتائیں۔

خاقان عباسی نے کہا کہ پی ڈی ایم کبھی ناکام نہیں ہوسکتی، پی ڈی ایم ایک مقصد کے لیے بنائی گئی ہے، ملک کا نظام آئین کے مطابق چلایا جائے گا، آصف علی زرداری ملک کو آئین کے مطابق چلانے میں کامیاب ہوتے ہیں تو ہم سب ان کے ساتھ ہیں۔

سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے مزید کہا کہ عثمان بزدار کے خلاف تحریک عدم اعتماد کی ہمیں ضرورت نہیں، بلاول ہاؤس جانے کا فی الحال کوئی ارادہ نہیں، این اے 249 میں مفتاح اسماعیل (ن) لیگ کے امیدوار ہیں پی ڈی ایم انہیں سپورٹ کرے گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں