92

ریلوے آفسران ملک یعقوب اور عابد رزاق نے مبینہ رشوت نہ ملنے پر قمر زماں کو نوکری سے محروم کر دیا

عبد الحکیم ( چوہدری قربان اسحاق سے) قمر زماں نے رجسٹر پریس کلب عبد الحکیم میں پریس کانفرنس کرتے ہوۓ بتایا کہ قمر زماں اپنے دادا اور والد کی محکمہ ریلوے میں خدمات کے بعد عارضی ملازم بھرتی ہوا اور سال 2012 میں عبد الحکیم پھاٹک پہ 15 ماہ ملازمت بھی کی۔پھر ملک یعقوبPWI شورکورٹ نے مبینہ طور پر قمر زماں35000 رشوت طلب کی غربت کے باعث رشوت نہ دینے پر قمر زماں کو نوکری سے نکال دیا گیا۔قمر زماں نے ہائیکورٹ ملتان کا دروازہ کھٹکھٹایا مگر وہاں عابد رزاق سابق ANEموجودہ DEN1 ملتان انکوائری پہ اثرانداز ہوتا رہا مذکورہ آفسران ملی بھگت سے قمر زماں کے والد پر دباؤ ڈالتے رہےاور نوکری کے عوض رشوت کا مطالبہ کرتے رہے۔عدالت سے انصاف نہ ملنے پر وزیراعظم شکایت سیل پر بھی درخواست گزاری جس کے ردعمل میں اسی آفسر عابد رزاق کو انکوائری کے لئے تعینات کر دیا گیا جس کے خلاف درخواست دی گئی تھی اس آفسر نے قمر زماں کو ملتان دفتر بلوا کر زبردستی خالی صفحات پر دستخط کروا کے تذلیل کر کے دفتر سے باہر نکال دیا۔دوبارہ ریلوے لاہور کے اعلی افسران کو درخواست دی گئی مگر دربدر کی ٹھوکریں کھانے کے باوجود انصاف کی فراہمی سے محروم رہا۔وزیراعظم عمران خان اور وزیراعلی پنجاب عثمان بزدار سے انصاف کی فراہمی کی اپیل کی ہے تاکہ ان کرپٹ آفیسرز کے خلاف قانونی کارروائی کر کے غریب خاندان کے واحد کفیل کو روزگار مہیا کیا جائے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں